خارش کا فوری دیسی علاج

خارش کا فوری دیس علاج اردو میں

خارش ایک ایسی مصیبت ہے، جس کے سامنے مزاحمت بہت مشکل کام ہے اور کوئی چیز یا دوائی ماسوائے کھجانے کے اس سے فوری نجات دلا کر سکون فراہم نہیں کر سکتی۔ لیکن یہ آرام دیرپا نہیں ہوتا بلکہ خارش بڑھنے کے باعث زیادہ کھجانے سے مزید جلدی مسائل پیدا ہونے شروع ہو جاتے ہیں۔

خارش سارے جسم پر بھی ہوسکتی ہے اور جسم کے کسی خاص حصے تک بھی محدود ہو سکتی ہے۔ بعض اوقات دانے یا مہاسے وغیرہ نکلنے کے باعث خارش ہوتی ہے۔ اکثر اوقات خارش کے سبب کا تعین کرنا مشکل ہوتا ہے تاہم صفائی سے غفلت، کمزوری، صحت، بڑھاپا، ننھے منے طفیلی کیڑے ، جراثیم اور فنگس خارش کے اہم اسباب ہیں ۔ گرم ماحول میں عموماً خارش زیادہ ہو جاتی ہے۔

اس بیماری میں زیادہ تر لوگ ڈاکٹروں اور حکیموں کے پاس جانے سے کتراتے ہیں۔ اور انٹرنیٹ پر کچھ اس طرح سے سرچ کر رہے ہوتے ہیں۔ شدید خارش کا فوری دیسی علاج کیا ہے؟ پرانی اور خشک خارش سے نجات کے آسان گھریلو آزمودہ ٹوٹکے کون کون سے ہیں۔ خارش کا طب نبوی سے علاج کیسے ممکن ہے۔ وغیرہ وغیرہ، اگر آپ بھی ایسا ہی کچھ سرچ کر رہے ہیں تو یہ تحریر آپ ہی کے لئے ہے۔

اگر آپ خارش کی تکلیف میں مبتلا ہیں تو اس سے اپنی توجہ ہٹانے کی پوری کوشش کریں ۔ مطالعے یا کسی دوسرے کام میں مصروف رہنے سے خارش کا احساس کم کیا جاسکتا ہے ۔ اچانک سخت سرد یا سخت گرم ماحول میں جانے اور مصالحے ، چائے اور دوسری نشہ آور اشیاء سے پرہیز کریں ۔ صفائی کا خاص خیال رکھیں ۔

  • ناریل کا تیلخشک جلد اور کسی کیڑے کے کاٹنے کی صورت میں پیدا ہونے والی خارش کا بہترین علاج ناریل کے تیل کا استعمال ہے۔ ماہرین کے مطابق خارش کی کوئی بھی وجہ ہو ناریل کا تیل اس سے نجات دلانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ خارش کی صورت میں متاثرہ جگہ یا پھر پورے جسم پر ناریل کے تیل کی مالش کی جائے۔
  • لیموںوٹامن سی اور بلیچ کی خصوصیات سے بھرپور لیموں خارش زدہ جلد کا بہترین علاج ہے۔ لیموں کا رس کھجلی ختم کرنے کے ساتھ جلدی حساسیت کو روک دیتا ہے۔
  • میٹھا سوڈاخارش کی وجہ سے متاثرہ حصہ کا علاج کرنے کے لئے ایک کپ میں تین حصے میٹھا سوڈا اور ایک حصہ پانی ڈال کر اسے اچھی طرح مکس کرلیں، پھر اس پیسٹ کو متاثرہ حصہ پر لگانے سے آپ کو فوری نتائج موصول ہوں گے۔
  • تلسیتلسی کے پتے تھیمول اور ایگونل جیسے اجزاءسے بھرپور ہوتے ہیں، جو نہ صرف جلدی خارش بلکہ جلن کا احساس بھی ختم کر سکتے ہیں۔ علاج کے لئے تلسی کے چند پتوں کو دھو لیں اور پھر براہ راست انہیں متاثرہ حصے پر رگڑ لیں۔
  • ایلوویرا / کوارگندلایلوویرا کے پودے سے پتے توڑیں اور پھر چاقو کی مدد سے انہیں کاٹ لیں، پھر ان پتوں کے اندر موجود محلول کو نکال لیں، جو ایک جیل کی صورت میں ہوتا ہے۔ اس جیل کو براہ راست متاثرہ حصے پر لگا کر خارش سے دیرپا آرام حاصل کیا جا سکتا ہے۔

مچھروں اور حشرات سے ہونی والی خارش کا علاج

مختلف قسم کے حشرات اور جراثیموں سے ہماری جلد کو ہمہ وقت خطرہ رہتا ہے۔ان میں سے مچھر ایک ایسی چیز ہے جو کسی نہ کسی طرح ہمیں کاٹنے میں کامیاب ہوجاتا ہے اور اس کے بعد جلد سرخ ہوجاتی ہے اور خارش ہونا عام سی بات ہے۔ تمام تراحتیاط کے باوجود ہمیں کبھی کبھار جلد کھجانے کی ضرورت تو پیش آ ہی جاتی ہے جو کہ بعض اوقات شدید تکلیف کا باعث بھی بن سکتی ہے۔ تو اس تکلیف سے نجات کیلئے چند آسان اور کارگر حل پیش خدمت ہیں۔

مچھر کے کاٹنے سے ہونی والی خارش کا علاج

  • جلدی خارش اور خصوصاً مکھیوں اور بھڑ کے ڈنگ کی صورت میں بینونائٹ چکنی مٹی بہت مفید ہے۔ اسے پانی میں گھول کر پیسٹ بنا لیں اور متاثرہ جگہ پر لگائیں۔ کہ جلد پر ہونے والی خارش کیلئے سیب کا سرکہ متاثرہ جگہ پر لگائیں اور اگر آپ چکنی مٹی کا پیسٹ پانی کی بجائے سیب کے سرکے میں بنائیں تو یہ اور بھی مفید ہوگا۔
  • کوار گندل یا ایلو ویراکا رس یا پتا مچھر کے کاٹنے والی جگہ پر لگائیں،یہ بھی دیگر اشیاءکی طرح آپ کے درد کے احساس کو بہت زیادہ کم کردے گا۔
  • جلدی خارش اور حشرات کے ڈنگ کا ایک آسان علاج پودینے کا استعمال ہے۔ پودینے کے پتوں کو پیس کر متاثرہ جگہ پر لگایا جا سکتا ہے۔اس سے آپ محسوس کریں گے کہ آپ کی چبھن کافی زیادہ کم ہوگئی ہے۔
  • لہسن کو چھیل کر اس جگہ لگائیں جہاں مچھر نے کاٹا ہے اور تب تک لگا کر رکھیں جب تک تکلیف میں کمی نہ ہوجائے،اس کے بعد پانی سے دھو لیں۔ یہ بھی پڑھیں: لہسن کے فوائد
  • علاوہ ازیں ایلوویرا کا استعمال جلد کی تمام تکالیف میں مفید ہے۔ ایلوویرا کا ایک ٹکڑا توڑ کر اسے لمبائی کے رخ کاٹ لیں اور اس کے اندر سے گاڑھا مادہ نکال کر براہ راست جلد پر لگائیں۔
  • کیڑے مکوڑوں یا حشرات کے کاٹنے کی صورت میں پھلوں کے چھلکے بھی مفید ثابت ہوتے ہیں۔ کیلے کا چھلکا یا تربوز کا چھلکا متاثرہ جگہ پر رگڑا جا سکتا ہے
  • ٹوتھ پیسٹ میں موجود پیپر منٹ کی وجہ سے جلد آرام آجاتاہے۔مچھر کے کاٹنے والی جگہ پر ٹوتھ پیسٹ لگائیں اور خشک ہونے کے بعد متاثرہ جگہ کو پانی سے دھولیں۔
  • لیموں کا رس یا لیموں رگڑنے سے بھی آپ کی تکلیف خاطر خواہ کم ہوجائے گی۔
  • جلد پر جلن کی صورت میں جئی کا آٹا بہت مفید ثابت ہو سکتا ہے۔ پانی کے ساتھ اس کاپیسٹ بنا کر متاثرہ جگہ پر لگائیں۔
  • انٹی بائیوٹک خصوصیات کی وجہ سے شہد بھی بہت مفید اثرات رکھتا ہے۔اسے متاثرہ جگہ لگانے سے نہ صرف تکلیف کم ہوگی بلکہ انفیکشن بھی نہیں ہوگی۔

سر کی خارش کا علاج

کئی بیماریوں جیسے سورائسیز، ایگزیما،جوؤںوغیرہ کی وجہ سے سر میں خارش ہوتی ہے۔اگر آپ سر میں خارش اور خشکی کی وجہ سے پریشان ہیں اور مہنگے شیمپو کی وجہ سے بھی یہ ٹھیک نہیں ہورہی تو ذیل میں بتائے گئے طریقے استعمال کرکے دیکھیں۔

سر میں ہونے والی خارش کا علاج

  • سیب کا سرکہ: اس میں طاقتور اجزاءہوتے ہیں جس کی وجہ سے سر کی جلد کی سوزش اور خشکی سے نجات ملتی ہے۔سردھونے کے بعد ایک مگ میں ایک چمچ سیب کا سرکہ ڈالیں اور سر میں لگائیں۔خیال رہے کہ اگر سر میں زخم ہوں تو آپ کو سیب کا سرکہ چبھے گالیکن اس کی وجہ سے خشکی اور خارش دور ہوجائے گی۔
  • مختلف تیلوں کا مجموعہ: مختلف تیل سر کی خارش کے لئے بہت مفید ہیں۔ناریل ،بادام،زیتون اور لیوینڈر کا تیل مکس کریں ۔رات کو سونے سے پہلے ان تیلوں کو سر میں لگائیں اور ساری رات لگارہنے دیں۔اگلی صبح سر کو کسی شیمپو سے دھولیں،اس طریقے سے نہ صرف خارش ختم ہوگی بلکہ آپ کے بال بھی مضبوط ہوجائیں گے۔
    یہ ماسک بنانے کے لئے کیلوں کو پیس لیں اور ان میں ایک چمچ شہد شامل کریں۔اب اس ماسک کو سر میں لگائیں اور 20منٹ تک لگارہنے دیں،اب کسی شیمپو سے سر دھولیں۔
  • بیکنگ سوڈا: پانی میں اتنی مقدار میں بیکنگ سوڈا ڈالیں کہ پیسٹ بن جائے،اب اس پیسٹ کو سر میں لگا کر 30 منٹ چھوڑ دیں۔اس کے بعد سر کو شیمپو کرلیں۔
  • لیموں کا رس: آپ کو چاہیے کہ لیموں کا رس لیں اور اسے سر میں براہ راست لگائیںاور30منٹ بعد سر شیمپوکرلیں۔آپ چاہیں تولیموں کو کاٹ کر خارش والی جگہوں پر براہ راست ملیں کہ اس طرح خارش دور ہوگی۔
  • ایلوویرا: اس کا رس نکالیں اور براہ راست سر میں لگائیں۔اس کی وجہ سے آپ کو ٹھنڈک کا احساس ہوگا ،چند منٹوں بعدسر دھولیں۔
  • پیاز کا رس: صدیوں سے پیاز کو مردہ جلد کو جاندار بنانے اور بالوں کو دوبارہ اگانے کے لئے استعمال کیا جاتارہا ہے۔سر کی خشکی اور خارش کے لئے بھی یہ بہت مفید پایا گیا ہے۔پیاز کا رس نکالیں اور اسے سر پر لگاکر ایک گھنٹے بعد سر دھولیں۔

طب نبوی میں خارش کا علاج

  1. مچھر اور کھٹمل کاٹ کھائیں تو انسان کافی بے چینی اور تکلیف اٹھاتا ہے،اسکی رات کی نیند غارت ہوجاتی ہے۔اسکا فوری علاج اگر کسی دوا کی صورت نہ ملے تو سورہ فاتحہ اور معوذتین (قرآن مجید کی آخری دو سورتیں، یعنی سورۃ الفلق اور سورۃ الناس) پڑھ کر نمک کی ڈلی لیں یا پسے نمک کو پانی میں گھول کر اس پر دم کر کے کاٹی ہوئی جگہ پر پھیریں، انشاء اللہ تکلیف اور سوزش سے آرام آ جائے گا ۔
  2. زہریلا کیڑا مکوڑا یا کوئی جانور کاٹ لے تو اسکا طبی علاج فوراً کرنا چاہئے تاہم اسکے ساتھ اسکا روحانی علاج بھی کیا جاسکتا ہے۔جب کوئی دوا موجود نہ ہوتو فوراً کاٹی ہوئی جگہ پر وضو کے بعد سورہ فاتحہ کا دم کرنا چاہئے۔
  3. کیڑے مکوڑوں کی وجہ سے سوزش ہوجائے اور خارش ہونے لگ جائے تو اس جگہ پر بسم اللہ الرحمن الرحیم پڑھ کر انگلی پھیرتے رہیں،گیارہ بار بسم اللہ شریف پڑھ کر یہ عمل کریں۔انشا اللہ افاقہ ہوگا ۔

خارش والی بیماریاں اور علاج

اگر ہاتھوں میں مستقل خارش ہونے لگے تو انسان بہت ہی مشکل میں پھنس جاتا ہے ۔ہاتھوں میں خارش کی کئی وجوہات ہوسکتی ہیں،آئیے آپ کو ان کی وجوہات اور اس کے تدارک کے بارے میں بتاتے ہیں۔

1 ایگزیما

اس جلدی بیماری میں جلد پر خارش، سوزش اور جلد پر سرخ دانے نمودار ہوتے ہیں جسے ایگزیما بھی کہا جاتا ہے۔ اس بیماری کی چند اہم علامات میں خارش، جلدی سوزش، خشکی، خون کا رسنا، جلد کا پھٹنا شامل ہیں۔ اس کے اسباب میں کھانے پینے کی الرجی جیسے دودھ، انڈے سے ہونے والی الرجی، پالتو جانوروں، گھروں میں مٹی، دھول، پولن وغیرہ شامل ہیں۔

جلد کی اس بیماری میں بھی ہاتھوں میں خارش کے ساتھ ان پر نشانات،خشکی،الرجی اور دیگر مسائل پیدا ہوجاتے ہیں۔ ماہرین جلد کا کہنا ہے کہ اس بیماری میں جلد میں انفیکشن کے ساتھ اس میں درد بھی ہونے لگتی ہے۔

ہاتھوں میں پسینہ آنے کی وجہ سے مسائل میں اضافہ بھی ہوتا ہے۔آپ کو چاہیے کہ ناریل کے تیل کا استعمال کریں، اس میں موجود انٹی بیکٹیریل اور انٹی فنگل خصوصیات کی وجہ سے آپ کو کافی سکون ملے گا اور یہ بیماری کم ہونے لگے گی۔

تھوڑا سا ناریل کا تیل لیں اور رات کو سونے سے پہلے اسے ہاتھوں پر ملیں اور مساج کریں۔آپ چاہیں تو دن میں بھی ناریل کا تیل کئی بار لگاکر خارش سے نجات پاسکتے ہیں۔

2 خشک جلد

اس بیماری میں ہاتھوں کی جلد بغیر کسی سرخی کے خارش کا شکار ہو جاتی ہے اور کافی تکلیف ہوتی ہے۔اس بیماری کی بڑی وجوہات میں سے ایک آپ کے اردگرد ماحول ہے،اس طرح کے مسائل عموماً سردیوں میں بڑھ جاتے ہیں۔

اگر آپ بھی اس مسئلے کا شکار ہیں تو اپنے ہاتھوں کو تر رکھیں اور اس مقصد کے لئے زیتون اور ناریل کے تیل کو ملا کر ہاتھوں کا مساج کریں۔ دن میں دو سے تین بار ان دونوں کے تیلوں کا مساج کرنے سے آپ کو خاطر خواہ سکون ملے گا۔

یہ بیماری کیڑے مکوڑوں کے کاٹنے کی وجہ سے ہوتی ہے جس میں ہاتھوں اور پاؤں کی انگلیوں کے درمیان شدید خارش ہونے لگتی ہے۔ اس بیماری سے نجات کے لئے ٹی ٹری آئل انتہائی مفید ہے۔آپ کو چاہیے کہ اس تیل کے ساتھ ہاتھوں کا مساج کریں۔ناریل کا تیل اور ٹی ٹری آئل کو مکس کریں اور ہر صبح اور رات کو سونے سے پہلے ہاتھوں کامساج کریں۔

حرف آخر

ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ اگر آپ کو جسم کے کسی دائیں حصے میں درد ہورہی ہے تو آپ کو چاہیے کہ بائیں جانب بالکل اسی جگہ پر کھجلی شروع کردیں۔اس کی وجہ ماہرین یہ بتاتے ہیں کہ دماغ کو یہ پیغام جاتا ہے کہ آپ مطلوبہ جگہ پر خارش کررہے ہیں اور وہ سگنل بھیجنا کم کردیتا ہے اور خارش ٹھیک ہوجاتی ہے۔

Kharish ka fori desi ilaj in Urdu

خارش کی ایک خاص قسم صرف داڑھی یا مونچھوں والی جلد کو متاثر کرتی ہے ۔ اس کا سبب یا تو جراثیم آلودہ استرا ہوتا ہے یا پھر ناک سے بہنے والا جراثیم آلودہ مادہ ۔ چونکہ یہ خارش کلین شیوڈ مردوں میں ہوتی ہے لہذا اس سے بچنے کا طریقہ یہ ہے کہ داڑھی اور مونچھیں بڑھالی جائیں ۔

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ اسے سوشل میڈیا پر شیئر بھی کر سکتے ہیں۔ تاہم اگر آپ اس تحریر کے حوالے سے مزید معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں یا آپ کے ذہن میں کوئی اور سوال ہے تو آپ ہمیں کمنٹس کر سکتے ہیں۔ آپ کے ہر کمنٹس ہر سوال کا جواب دیا جائے گا۔

نوٹ: خارش سے متعلقہ یہ تحریر محض معلومات عامہ کے لئے شائع کی جا رہی ہے۔ یاد رکھیں ہر ٹوٹکہ ہر انسان کےلئے نہیں ہوتا۔ اِس لئے اپنے تئیں کوئی نسخہ مت آزمائیں، بلکہ اپنے معالج (ڈاکٹر، طبیب) سے مشورہ کر کے اس کی ہدایت کے مطابق عمل کریں، شکریہ

یہاں سے شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے