پاؤں کی بدبو سے مکمل نجات کے قدرتی طریقے اور احتیاطیں

پاؤں کی بدبو سے نجات کے طریقے

پاؤں کی بدبو

جوتا یا جرابیں اتارنے کے بعد پاؤں سے آنے والی بدبو نہایت ہی ناگوار محسوس ہوتی ہے اور آس پاس موجود لوگ آپ کو عجیب نظروں سے دیکھنے لگتے ہیں۔ پاؤں کی بدبو سے اکثر لوگ پریشان رہتے ہیں اور اس سے نجات کےلئے مختلف تراکیب استعمال کرتے ہیں، آئے روز جوتے اور جرابیں تبدیل کرتے ہیں۔ لیکن پھر بھی پاؤں کی بدبو کی وجہ سے انہیں ہر جگہ شرمندگی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

اس بیماری میں زیادہ تر لوگ ڈاکٹروں اور حکیموں کے پاس جانے سے کتراتے ہیں۔ اور انٹرنیٹ پر کچھ اس طرح سے سرچ کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ پاؤں میں بدبو پیدا ہونے کی علامات اور وجوہات کون کون سی ہیں۔ پاؤں کی بدبو سے نجات حاصل کرنے کے نسخے، ٹوٹکے، طریقے اور احتیاطیں کون کون سی ہیں۔

پاؤں کی بدبو کا فوری دیسی علاج کیا ہے۔ پاؤں کی بو سے ہمیشہ ہمیشہ کے لئے چھٹکارہ کیسے ممکن ہے۔ اگر آپ بھی ایسا ہی کچھ سرچ کر رہے ہیں تو یہ تحریر آپ ہی کے لئے ہے۔

پاؤں میں بدبو پیدا ہونے کی وجوہات

بدبو منہ کی ہو یا پاؤں کی، آپ کے لئے کسی بھی محفل میں شرمندگی اور ناگواری کا باعث بنتی ہے۔ پورا انسانی جسم بدبو پیدا نہیں کرتا بلکہ جسم کے کچھ خاص حصے ہوتے ہیں جو ایسی صورت حال پیدا کر دیتے ہیں۔

پسینے کے باعث خصوصاً مردوں کے پیروں سے بہت زیادہ بدبو آتی ہے کیوں کہ زیادہ تر مرد حضرات ہی بند جوتے پہنتے ہیں۔ پاؤں میں بدبو پیدا ہونے کی درج ذیل وجوہات ہوتی ہیں۔

  1. پاؤں میں پسینہ آنے سے جلد کے مردہ خلیے اور پسینے کے بیکٹیریا مل کر بد بو پیدا کرتے ہیں۔ اگر آپ کے پاؤں سے بو آتی ہے تو روزانہ کی بنیاد پر اپنی جرابیں تبدیل کریں۔ پسینے سے بچنے کے لئے اپنے پاؤں پر ٹیلکم پاؤڑر چھڑک کر جراب پہنیں۔
  2. اپنے جوتوں کو نمی سے بچائیں اور استعمال کے بعد انہیں دھوپ میں رکھیں تاکہ ان میں موجود پسینہ خشک ہو جائے۔ روزانہ ایک ہی جوتے نہ پہنیں بلکہ ایک دو دن بعد کوئی اورجوتا استعمال کریں ۔
  3. ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ ذہنی تناؤ کی وجہ سے انسان کو زیادہ پسینہ آتا ہے اور نتیجہ کے طورپر پاؤں سے بدبو آنے لگتی ہے۔ ایسی صورت میں اپنے ساتھ جرابوں کی اضافی جوڑی رکھیں تاکہ اس مشکل سے بچا جا سکے۔
  4. پسینہ آنے کے بعد انگلیوں کے درمیان میں انفیکشن بھی ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے بدبو میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ ایسی صورت میں اپنے پاس انٹی فنگل کریم رکھیں اور جب جوتے اتار دیں تو اس کریم کو متاثرہ جگہوں پر لگائیں تا کہ فنگس کا خاتمہ ہو سکے۔

پاؤں کی بدبو کا دیسی علاج

پاؤں کی بدبو ختم کرنے کے دس آسان طریقے

پیروں سے بدبو کا آنا اگر دوسروں میں ناگواری کا احساس پیدا کرتا ہے، تو سوچیں ،جس کے پاؤں سے بدبو آ رہی ہے، شرم کے مارے  اس کا کیا حال ہوتا ہو گا،اس کا تو صرف تصور ہی کیا جا سکتا ہے۔ ایسے حضرات اگر تھوڑی دیر دیر کےلئے جرابیں اتاردیں، تو آپ انہیں اپنے پاس بیٹھنے نہیں دیں گے۔

تو آئیے جانتے  ہیں کہ ایسا کیا کیا جائے کہ پاؤں کی نا خوشگوار  بدبو سے ہمیشہ ہمیشہ کے لئے نجات مل جائے۔

1 لیموں کے رس کا استعمال

لیموں کا رس اینٹی بیکٹیریل صلاحیت رکھتا ہے، لہذا پاؤں کی بدبو سے نجات حاصل کرنے کے لئے دو اونس پانی میں لیموں کا رس ملا کر پاؤں پرلگائیں۔ یہ عمل تب تک دہراتے رہیں جب تک مکمل آفاقہ نہ ہو جائے۔

2 سبز چائے کے ذریعے بدبو کا خاتمہ

ایک برتن میں نیم گرم صاف پانی لے کر اس میں سبز چائے کے ٹی بیگز ڈال دیں۔ اس کے بعد کچھ دیر کے لیے اس میں دونوں پاؤں ڈبو کر رکھیں۔ اس طرح جراثیم سے نمٹ کر پاؤں میں خوشبو پیدا کی جاسکتی ہے۔

3 بدبو کے خاتمہ کے لئے نمک کا استعمال

صاف پانی سے بھرے برتن میں تھوڑا کھانے کا نمک ملا دیجیے اور اس میں پاؤں ڈال کر بیٹھ جائیں۔ کچھ دیر بعد دونوں پاؤں پانی سے نکال کر ہوا میں رہنے دیں تاکہ وہ قدرتی طور پر خشک ہو جائیں۔ اس طرح بدبو کا مکمل طور پر خاتمہ ہو جائے گا۔

4 پاؤڈر کا استعمال

ٹیلکم پاؤڈر یا بچوں کے پاؤڈر کے استعمال سے پاؤں کی بدبو سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے اور اس دوران طویل دورانیے تک خوشبو برقرار رہتی ہے۔ جس کی وجہ سے بدبو کا احساس نہیں ہوتا۔

5 سوڈے کا استعمال

کھانے کا سوڈا پاؤں پر ملنے سے نا صرف بدبو کا خاتمہ کیا جا سکتا ہے بلکہ بدبو بنانے والے جرثومے بھی ختم ہو جاتے ہیں۔ کھانے کا سوڈا جرثومے کو پاؤں کی بدبو کا سبب بننے سے روک دے گا۔

6 سیب کے ذریعے بدبو کا خاتمہ

سیب کے اندر جست (زنک) کی بڑی مقدار پائی جاتی ہے اور یہ پاؤں کی بدبو ختم کرنے کے لیے بہت مفید ہے۔ پہلے سیب کو اچھی طرح سے پیس لیں ، اس کے بعد اس نرم مرکب کو دونوں پاؤں پر مل دیں اور تھوڑی دیر بعد دھو لیں۔ یہ عمل تین سے چار بار کرنے سےپاؤں کی بدبو کا خاتمہ ہو جاتا ہے۔

7 بدبو کے خاتمہ کےلئے لونگ کا استعمال

کچھ عدد لونگ لے کر جوتے یا جرابوں میں رکھ دیں۔ اس طرح آپ کے جوتوں اور جرابوں سے ایک لمبے عرصے تک خوشگوار مہک آتی رہے گی۔ اور بدبو کا احساس نہیں رہے گا۔

8 جئی کا پاؤڈر

جئی کو پاؤں کی بدبو روکنے کی غرض سے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ نیم گرم پانی سے بھرے برتن میں تھوڑا سا جئی کا پاؤڈ ڈالیں اور پھر دنوں پاؤں اس پانی میں رکھ کر انہیں اچھی طرح ملیں۔ اس کے بعد پاؤں کو صاف پانی سے دھو کر خشک کر لیں۔

یہ بھی پڑھیے: اچھی صحت کا راز آپ کے پاؤں میں پوشیدہ ہے

9 سبزیوں کا تیل

کسی بھی قسم کا سبزی کا تیل تھوڑی مقدار میں لے کر ہاتھ کی ہتھیلی پر ڈالیے اور جرابیں پہننے سے قبل اس کو اچھی طرح پاؤں پر مل لیجیے۔ پاؤں کی بدبو کا مقابلہ کرنے کے حوالے سے اس عمل کے اچھے نتائج سامنے آئیں گے۔

10 لیونڈرکے تیل کے ذریعے پاؤں کی بدبو کا خاتمہ

ایک برتن میں صاف پانی لے کر اس میں تھوڑا لیونڈر کا تیل ملا دیں اور پھر کچھ دیر کے لیے اس میں دونوں پاؤں ڈوبے رہنے دیں۔ اس کے علاوہ لیونڈر کے تیل سے دونوں پاؤں کو اچھی طرح رگڑا جا سکتا ہے۔ یہ تیل بدبو کا سبب بننے والے جرثومے کو مار دیتا ہے۔

پاؤں کی بدبو سے بچنے کےلئے ممکنہ احتیاطیں

  • اگر آپ کے پاؤں سے بدبو آتی ہے تو  بہتر یہ ہے کہ جلد ہی موزے تبدیل کرتے رہیں تاکہ بو پیدا کرنے والے جراثیم مزید پھلنے پھولنے نہ پائیں۔ جوتوں کو اندر سے صاف اور خشک رکھیں کیونکہ نمی والے جوتوں میں بدبو جمع ہوتی رہتی ہے
  • اپنے پیروں کو خشک اور صاف رکھیں، نہانے کے بعد انگلیوں کے درمیان والی جگہوں کو بھی خصوصی طور پر خشک کریں۔
  • صفائی کا خاص خیال رکھیں، ایک ہی جوتایا جراب پورا ہفتہ استعمال نہ کریں، اگر آپ کے پاس مزید جوتے یا جرابیں نہیں ہیں، تو جرابوں کو باقاعدگی سے اچھی طرح دھوئیں اور جوتوں کھلی فضا میں رکھیں۔
  • پیروں کی سٹراند کو ختم کرنے کے لئے ضروری ہے کہ دافع بدبو  پاؤڈر یا سپرے استعمال کریں۔ جوتوں کو کسی بند جگہ پر مت پڑے رہنے دیں۔
  • اگر موسم اجازت دے تو ہمیشہ کھلے جوتے، یعنی سینڈل اور چپل وغیرہ کا استعمال کریں۔
  • آپ ایسے موزے بھی خرید سکتے ہیں جو پسینہ جذب کرکے پیروں کی بو کم کرتے ہیں۔

نوٹ پاؤں کی بدبو سے متعلقہ یہ تحریر محض معلومات عامہ کے لئے شائع کی جا رہی ہے۔ یاد رکھیں ہر ٹوٹکہ ہر انسان کےلئے نہیں ہوتا۔ اِس لئے اپنے تئیں کوئی نسخہ مت آزمائیں، بلکہ اپنے معالج (ڈاکٹر، طبیب) سے مشورہ کر کے اس کی ہدایت کے مطابق عمل کریں، شکریہ۔

اگر آپ کو یہ تحریر اچھی لگی ہے تو آپ کا حق بنتا ہے کہ اسے فیس بک پر زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ تاکہ آپ کے دوست احباب کی بھی بہتر طور پر راہنمائی ہو سکے۔

یہاں سے شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے